har aik baat pe kehte ho ghazal lyrics

read har aik baat pe kehte ho ghazal lyrics

ہر ایک بات پہ کہتے ہو تٌم کہ تو کیا ہے

تٌمہی کہو کہ یہ اندازِ گٌفتگو کیا ہے

نہ شعلے میں یہ کرشمہ، نہ برق میں یہ ادا    

کوئی بتاوکہ وہ شوخِ تُند خو کیا ہے

یہ رشک ہے کہ وہ ہوتا ہے ہم سُخن تُم سے  

ورنہ خوفِ بد آموزی عدو کیا ہے

چپک رہا ہے بدن پر لہو سے پیراہن   

     ہماری جیب کو اَب حاجتِ رفو کیا ہے

رگوں میں دوڑتے پھرنے کے ہم نہیں قائل

    جو آنکھ ہی سے نہ ٹپکےتوپھر لہو کیا ہے

جلا ہے جسم جہاں دِل بھی جَل گیا ہوگا

    کٌریدتے ہو جو اَب راکھ جٌستجو کیا ہے

وہ چیز جس کے لئے ہم کو ہو بہشت عزیز 

      سوائے بادہ ء گلفام مُشک بو کیا ہے

پیوں شراب اگر ختم بھی دیکھ لوں دو چار  

Advertisement

      یہ شیشہ و قدح و کوزہ و سبو ، کیا ہے

رہی نہ طاقتِ گٌفتار اور اگر ہو بھی   

   تو کِس اٌمید پہ کہیے کہ آرزو کیا ہے

بنا ہےشہہ کا مصاحب   پھِرے ہے اِتراتا

وگرنہ شہر میں غالبؔ کی آبرو کیا ہے

ghazal har aik baat pe kehte ho lyrics

har aik baat pay kehty ho tum key tu kiya hai

tumhi kaho keh ye andaz e guftgu kiya hai

Na sholy main yeh karishma, na barq main ye ada

Koi batao keh wo shokh tund khu kiya hai

Yeh rashk hai keh wo hota hai ham sukhan tum say

Warna khauf e baad aamozi edo kiya hai

Chipak raha hai badan per laho say perahan

Hamari jaib ko ab hajit e rafu kiya hai

ragon main dorrtay phirnay kay ham nahi qail

jo ankh hi say na tapkay tu phir laho kiya hai

jalla hai jism jahan dil bhi jal giya ho ga

kuraidtay ho jo aab rakh e justaju kiya hai

Wo chez jis kay liye ham ko ho bahisht aziz

Siwa e bada e gulfam mushk boo kiya hai

Piyun sharab agar khatam bhi dekh loon du charr

Yeh sheesha o qadd o kuza o sabo kiya hai

rahi na taqat e guftar aur agar ho bhi

tuu kis umeed pay kehtay ho ke aarzo kiya hai

bana hai sheh ka masahib phiry hai itrata

wagarna sheher main ghalib ki aabro kiya hai

read more

thanx for free image download

https://www.pexels.com/

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge
%d bloggers like this: