yun di hamain azadi lyrics in urdu

milli naghma yun di hamain azadi is very famous. Read lyrics in urdu.

yun di hamain azadi key duniya hui heran

Aye Quaid-e-Azam tera ehsan ha ehsan

یوں دی ہمیں آذادی کہ دُنیا ہوئی حیران

اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان

Har simt musalmanon peh chayi thi tabahi
Mulk apna tha aur ghairon kay hathon mein thi shahi

Asey main utha, deen muhmmad (S.A.W) ka sipahi
Aur nara-e-takber say di tu nay gwahi

Islam ka jhanda liye aya sar-e-meidan
Aye Quaid-e-Azam tera ehsan hay ehsan

ہر سمت مُسلمانوں پہ چھائی تھی تباہی

مُلک اپنا تھا اور غیروں کے ہاتھوں میں تھی شاہی

ایسے میں اُٹھا دینِ مُحمّدؐکا سِپاہی

اور نعرہِ تکبّیر سے دی تو نے گواہی

اِسلام کا جھنڈّا لیے آیا سرِ میدان

اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان

yun di hamain azadi lyrics

Dekha tha jo iqbal nay ik khwab suhana
Iss khwab ko ik roz haqeqat hai banana

Ye socha jo tu ne tu hansa tujh pay zamana
Har chal say chaha tujhay dushman nay harana

Advertisement

Mara wo tu ne daao kay dushman bhi gaye maan
Aye Quaid-e-Azam tera ehsan ha ehsan

دیکھا تھا جو اقبال نے اِک خواب سُہانا

اِس خواب کو اِک روز حقیقت ہے بنانا

یہ سوچا جو تُو نے تَو ہنسا تُجھ پہ زمانہ

ہر چال سے چاہا تُجھے دُشمن نے ہرانا

مارا وہ تُو نے داؤ کہ دُشمن بھی گیا مان

اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان

Larny ka dushmanon say ajab dhang nikala
Na ttoop na bandooq na talwar na bhala

Sachai kay anmol, asoolon ko sanmbhala
jinah tere paigham mein jadu tha nirala

Imaan waley chal pary sun kar tera farman
Aye Quaid-e-Azam tera ehsan ha ehsan

لڑنے کا دُشمنوں سے عجب ڈھنگ نِکالا

نہ توپ ،نہ بندوق، نہ تلوار، نہ بھالا

سچائی کے انمول اصّولوں کو سنبھالا

جنّاح تیرے پیغام میں جادو تھا نرالا

ایمان والے چل پڑے سُن کر تیرا فرمان

اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان

yun di hamain azadi lyrics in urdu

Naqsha badal key rakh diya iss mulk ka tu nay
Saya tha Muhammad (S.A.W) ka Ali ka taary sar pay

Duniya say kaha tu nay koyi hum say na uljhay
Likha hai is zamen pay shahedon nay lahu say

Aazad hain azaad rahain gey yeh musalman
Aye Quaid-e-Azam tera ehsan ha ehsan

نقّشہ بدّل کے رکھ دِیا اِس مُلک کا تو نے

سایہ تھا مُحمّدؐ کا علّی کا تیرے سَر پر

دُنیا سے کہا تُو نے کوئی ہم سے نہ اُلجھے

لِکھا ہے اِس زمین پہ شہیدوں نے لہو سے

آذاد ہیں آذاد رہیں گے یہ مُسلمان

اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان

Punjab key bangal key jawan chal paray
Sindhi, Blochi, aur Pathan chal paray

Ghar bar chor kay sar-o-saman chal paray
Sath apnay muhajer liye Quran chal paray

Aur Quid-e-millat bhi chaley hone ko qurbaan
Aye Quaid-e-Azam tera ehsan ha ehsan

پنجاب کے بنگال کے جوان چل پڑے

سِندھی ، بلوچی اور پٹھان چل پڑے

گھر بار چھوڑ کے سَر و سامان چلّ پڑے

ساتھ اپنے مُہاجر لیے قُرّآن چل پڑے

اور قائدِ مِلّت بھی چلے ہونے کو قُربان

اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان

read more

thanx for free image download

http://allfreeimages2011.blogspot.com/

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge
%d bloggers like this: