Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

munawwar rana shayari in urdu top 10 sher

read munawwar rana shayari in urdu

اب جٌداٸ کے سفر کو میرے آسان کرو

تٌم مٌجھے خواب میں آ کر نہ پریشان کرو

ab judai ky safar ko mery aasan karo

tum mujhy khwab main aa kar na pareshan karo

نہیں تھے تو کیا کمی تھی یہاں

نہ ہوں گے تو کیا کمی ہو گی

nahi thay tu kiya kami thi yahan

na hoon gaiy tu kiya kami ho gi

جب بھی کشتی میری سیلاب میں آ جاتی ہے

ماں دٌعا کرتی ہوٸ خواب میں آ جاتی ہے

jab bhi kashti meri salab main aa jati hai

maan dua karti hui khwab main aa jati hai

جو حکم دیتا ہے وہ التجا بھی کرتا ہے

یہ آسماں کہیں پر جھٌکا بھی کرتا ہے

jo hukm deta hai vo iltija bhi karta hai

ye aasman kahin par jhuka bhi karta hai

کل اپنے آپ کو دیکھا تھا ماں کی آنکھوں میں

یہ إٓینہ ہمیں بوڑھا نہیں بتاتا ہے

kal apnay aap ko dekha tha man ki aankhon main

ye aaina hamain boorha nahi batata hai

munawwar rana shayari in urdu

اک زخمی پرندے کی طرح جال میں ہم ہیں

اے عشق ابھی تک تیرے جنجال میں ہم ہیں

ik zakhmi parindy ki tarah jaal main hum hain

aye ishq abh tak tery janjaal main ham hain

ہمارے کٌچھ گٌناہوں کی سزا بھی ساتھ چلتی ہے

اب ہم تنہا نہیں چلتے دوا بھی ساتھ چلتی ہے

hamary kuch gunahon ki saza bhi sath chalti hai

ab ham tanha nahi chalty dawa bhi sath chalti hai

بادشاہوں کو سِکھایا ہے قلندر ہونا

آپ آسان سمجھتے ہیں منّورؔ ہونا

badshahon ko sikha diya hai qalander hona

aap aasan samajhty hain munawwar hona

مسرتوں کے خزانے ہی کم نکلتے ہیں

کِسی بھی سینے کو کھولو تو غم مِلتے ہیں

mussarton kay khazany hi kam nikalty hain

kisi bhi seeny ko kholo tu gham milty hain

سو جاتے ہیں فُٹ پاتھ پہ اخبار بچھا کے

مزدور کبھی نیند کی گولی نہیں کھاتے

so jatay hain footpath pay akhbar bicha kay

mazdor kabhi neend ki goli nahi khatay

تٌمھاری آنکھوں کی توہین ہے ذرا سوچو

تٌمھارا چاہنے والا شراب پیتا ہے

tumhari ankhon ki tuheen hai zara socho

tumhara chahnay wala sharab peeta hai

read more

یہ کربلا کی زمیں ہے اسے سلام کرو

یہاں زمیں سے پتھر بھی نم نکلتے ہیں

ye karbla ki zameen hai issy salam karo

yahan zameen say pathar bhi num nikalty hain

read more

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge