judai poetry in urdu – judai shayari

read judai poetry in urdu.

تُجھ سے بچھڑے ہیں تو حُسنِ اِتفاق تو دیکھ

سارے شہر میں جُدائی کی وبا پھیل گئی

tujh say bicharray haan tu husn e itefaq tu dekh

saray shehar main judai ki waba phail gai

judai kaam apna kar gai hai - judai poetry in urdu - besturdupoetry.pk
judai kaam apna kar gai hai – judai poetry in urdu – besturdupoetry.pk

جُدائی کام اپنا کر گئی ہے

تُجھے پانے کی خواہش مرگئی ہے

judai kaam apna kar gai hai

tujhay panay ki khwahish mar gai hai

agar manzil judai hai tu janay do mujhay
agar manzil judai hai tu janay do mujhay

اگر منزل جُدائی ہے، تو جانے دو مُجھے

لوٹ کر کب آو گے پوچھتے کیوں ہو

agar manzil judai hai tu janay do mujhay

laut kar kab aao gaiy puchatay kiyun ho

main tassawar bhi judai ka bhala kaisay karon
main tassawar bhi judai ka bhala kaisay karon

میں تصّور بھی جُدائی کا بھلا کیسے کروں

میں نے قسمت کی لکیروں سے چُرایا ہے تُجھے

main tassawar bhi judai ka bhala kaisay karon

main nay qismat ki lakeeron say churaya hai tujhay

phir mujhay tuut kay chaha us nay
phir mujhay tuut kay chaha us nay

پھر مُجھے ٹوٹ کے چاہا اُس نے

پھر بچھڑنے کے زمانے آئے

phir mujhay tuut kay chaha us nay

phir bicharrnay kay zamanay aaye

jab koi mashooq say mil kar juda honay lagay
jab koi mashooq say mil kar juda honay lagay

وہ قیامت کی گھڑی ، وہ موت کا ہے سامنا

جب کوئی معشوق سے مل کر جُدا ہونے لگے

wo qiyamat ki gharri, wo maut ka hai samna

jab koi mashooq say mil kar juda honay lagay

judai poetry in urdu

sath calta hai sada morr judai wala
sath calta hai sada morr judai wala

ساتھ چلتا ہے سدا موڑ جُدائی والا

یہ مُحبّت کوئی آسان سفر تھوڑی ہے

sath calta hai sada morr judai wala

yeh muhabbat koi asan safar thori hai

main kis tarah say guzaron ga umer bhar ka firaq
main kis tarah say guzaron ga umer bhar ka firaq

میں کِس طرح سے گُزاروں گا عُمر بھر کا فراق

وہ دو گھڑی بھی جُدا ہو تو جان جاتی ہے

main kis tarah say guzaron ga umer bhar ka firaq

wo do gharri bhi juda ho tu jan jati hai

یہ ٹھیک ہے نہیں مرتا کوئی جدائی میں 

خدا کسی کو کسی سے مگر جدا نہ کرے 

yeh theek hai, nahi marta koi judai main

khuda kisi ko kisi say magar juda na karay

جُدائی ہوگئی دو دِن میں اُن سے

یہ جانا تھا کہ ہم چھوٹیں گے مَر کے

judai ho gai do din main un say

yeh jana tha keh haam chotain gaiy marr key

ایک دِن مِل کے پھر نہیں مِلتے

کس قیامت کی یہ جُدائی ہے

aik din mil kay phir nahi miltay

kis qiyamat ki yeh judai hai

بے وفا وقت تھا ، تُم تھے یا  مُقدر میرا

بات اتنی ہے کہ انجام جُدائی نِکلا

bewafa waqt tha, tum thay ya muqadar mera

baat itni hai kaeh anjam judai nikla

read more

thanx for free image download

https://www.ecopetit.cat/

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge

%d bloggers like this: