poetryشاعری

khalil ur rehman qamar poetry in urdu 10 sher

read khalil ur rehman qamar poetry in urdu

وقت بدلے گا تو اِس بار میں پوچھوں گا اسے

تٌم بدلتے ہو تو کیوں لوگ بدل جاتے ہیں

waqt badlay ga tu iss bar main puchon ga usay

tum badalty ho tu kiyun log badal jatay hain

مطلب یہ کہ بھُولا نہیں ہوں، یہ بھی نہیں کہ یاد آتے ہو

پہلے سب سے پہلے تُم تھے، اب تُم سب کے بعد آتے ہو

matlab ye keh bhulla nahi hoon, ye bhi nahi keh yaad aatay ho

pehly sab say pehly tum thay, ab tum sab kay baad aatay

اپنی آنکھوں میں قمرجھانک کر دیکھوں کیسے

مُجھ سے دیکھے ہُوئے منظر نہیں دیکھے جاتے

apni ankhon main qamar jhank kar dekhon kesy

mujh say dekhy huwy manzar nahi dekhy jatay

تُم بھی ویسے تھے مگر تُم کو خُدا رہنے دِیا

اس طرح تم کو زمانے سے جُدا رہنے دِیا

tum bhi vesy thay magar tum ko Khuda rehnay diya

iss tarah tum ko zamanay say juda rehnay diya

khalil ur rehman qamar poetry in urdu

تُو نے کِس نام سے بدلا ہے میرا نام بتا

کس کو لِکھا تو میرا نام مٹایا ہو گا

tu nay kis naam say badal hai mera naam bata

kis ko likha tu mera naam mitaya ho ga

یونہی کُچھ سوچ لیا ہو گا مُکرنے کا سبب

اور میرا جُرم بھی لوگوں کو بتایا ہو گا

youn hi kuch soch liya ho ga mukarny ka sabab

aur mera jurm bhi lagon ko bataya ho ga

ایک چہرے سے اٌترتی ہیں نقابیں کِتنی

لوگ کِتنے ہمیں اِک شخص میں مِل جاتے ہیں

aik chehray say uterti hain naqabain kitni

log kitnay hamain ik shakhs main mil jatay hain

میری برسوں کی اُداسی کو صلہ کُچھ تو مِلے

اس سے کہہ دو وہ میرا قرض چُکانے آئے

meri barson ki udasi ko sila kuch tu milay

us say keh do vo mera qarz chukanay aaye

read more

One thought on “khalil ur rehman qamar poetry in urdu 10 sher

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

CommentLuv badge