ibn e insha poetry in urdu insha ji utho

read ibn e insha poetry in urdu.

اِنشّإ جی اُٹھو اَب کُوچ کَرو ، اِس شہر میں جِی کو لَگانا کِیا
وحشی کو سکوں سے کیا مطلب، جوگی کا نگر میں ٹھکانہ کیا

Īnsẖā Jī Ūtẖō, Āb Kōōcẖ Kārō, Īss Sẖāẖr Māī Jī Kā Lāģānā Kyā
Wāẖsẖī Kō Sūkōō’N Sāy Kyā Mātlāb, Jōģī Kā Nāģār MāīN Tẖīkānā Kyā

insha ji utho ghazal full lyrics
insha ji utho ghazal full lyrics

اس دل کے دریدہ دامن میں دیکھو تو سہی،سوچو تو سہی
جس جھولی میں سو چھید ہوئے،اس جھولی کا پھیلانا کیا

Īss Dīl K Dārēēdā Dāāmān Kō, Dēkẖō Tō Sāẖī, Sōcẖō Tō Sāẖī
Jīss Jẖōlī Māī Sāū Cẖāīd ẖūāy, Ūss Jẖōlī Kā Pẖāīlānā Kyā

شب بیتی چاند بھی ڈوب چلا، زنجیر پڑی دروازے میں
کیوں دیر گئے گھر آئے ہو، سجنی سے کرو گے بہانہ کیا

Sẖāb Bēētī Cẖāānd Bẖī Dōōb Cẖālā, Zānjēēr Pārī Dārvāzāy Māī
KyūN Dēɨr Ģāēy Ģẖēr Āyaē ẖō, Sājnī Sāēy Kārō Ģāay Bāẖānā Kɨyā

اس حسن کے سچے موتی کو ہم دیکھ سکیں اور چھو نہ سکیں
جسے دیکھ سکیں پر چھو نہ سکیں، وہ دولت کیا خزانہ کیا

Īss ẖūsān K Sūcẖāy Mōtī Kō, ẖūm Dēkẖ Sākāīn Pār Cẖẖō Nā Sākāīn
Jīsy Daɨkẖ Sākāīn Pēr Cẖẖū Nā Sākāīnn, Wō Dāūūlāt Kɨyā Wō Kẖɨzānā Kyā

پھر ہجر کی لمبی رات میں سنجوگ کی ہے تو ایک گھڑی
جو دل میں ہے لب پر آنے دو شرمانہ کیا گھبرانا کیا

Pẖīr ẖījēr Kī Lāmmbī Rāātōn Mīāān, Sānjōģ Kītū ẖāī īk Ģẖārrī
Jō Dīll Mēāī ẖāyī Lāab Pēr Āānēy Dō, Sẖērmānā Kɨyā Ģẖābrānā Kɨyā

ibn e insha poetry in urdu

اس روز کو ان کو دیکھا ہے اب خواب کا عالم لگتا ہے
اس روز جو ان سے بات ہوئی وہ بات بھی کیا افسانہ کیا

Ūss Rōz Jō Ūnkō Dēkẖā ẖāī, Ābb Kẖūwāāb Kā Āālām Lāģtā ẖāī
Ūss Rōz Jō Ūnn Sāy Bāāt ẖūēē, Wō Bāāt Bẖī Tẖī Āfsānā Kyā

اس کو بھی جلا دہکتے ہوئے من، اک شعلہ آگ بھبھولا بن
یوں آنسو میں بہہ جانا کیا، یوں مٹی میں مل جانا کیا

Ūskō Bẖī Jālā Dūkẖtāy ẖūāy Mūn, Īk Sẖōlā Āāģ Bẖābẖūlā Bānn
Yōūnẖ Āānsū Māī Bēẖẖ Jānā Kyā, Yōūnẖ Māātī Māī Mīl Jānā Kyā

جب شہر کے لوگ نہ رستہ دیں،کیوں بن میں نہ جا بس رام کریں
دیوانوں کی سی نہ بات کرے تو اور کرے دیوانہ کیا

Jāb Sẖẖēẖēr Kāāy Lōģ Nā Rāsttā DāēīN, Kēɨyūn Bān Māīn Nā Jā Bɨssrām Kārēɨn
Dɨwānōn’Kī Sɨ Nā Bāātt Kārry, Tū Āūr Kārāy Dēwānā Kɨyāā

kal chudhvin ki raat thi
kal chudhvin ki raat thi

کل چودھویں کی رات تھی شب بھر رہا چرچا ترا

کچھ نے کہا یہ چاند ہے کچھ نے کہا چہرا ترا

kal chudhvin ki raat thi shab bhar raha charcha tera

kuch nay kaha yeh chand hay kuch nay kaha chehra tera

read more

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge

%d bloggers like this: