halat poetry in urdu | halat shayari in urdu

read halat poetry in urdu and halat shayari in urdu.

حَالات کے قَدموں پہ قلندر نہیں گِرتا

ٹُوٹے بھی جو تارا تو زَمیں پَر نَہیں گِرتا

گِرتے ہیں سمندرمیں بڑے شوق سے دَریا

لیکن کِسی دَریا میں سَمندر نہیں گِرتا

سمجھو وہاں پھل دار شجر کوئی نہیں ہے

وہ صحن کہ جِس میں کوئی پتھر نہیں گِرتا

اِتنا تو ہُوا فائدہ بارِش کی کمی کا

اِس شہر میں اَب کوئی پِھسل کر نہیں گِرتا

اِنعام کے لالچ میں لِکھے مدّح کِسی کی

اِتنا تو کبھی کوئی سُخن وَر نہیں گِرتا

حیران ہے کئی روز سے ٹھہرا ہوا پَانی

تالاب میں اَب کیوں کوئی کنکر نہیں گِرتا

اِس بَندۂ خُوددَار پہ نَبیوں کا ہے سایہ

جو بھوک میں بھی لُقمۂ تَر پَر نہیں گِرتا

کرنا ہے جو سَرمعرکۂ زیست تو سُن لے

بےبازوئےحیدردرِ خیبر نہیں گِرتا

قائم ہے قتیلؔ اَب یہ میرے سَر کے سَتوں پر

بھونچال بھی آئے تو میرا گھر نہیں گِرتا

halat poetry in urdu – Halat kay qadmon pay qalandar nahi girta

Halat kay qadmon pay qalandar nahi girta

Totay job hi tara tu zamin par nahi girta

Girtay hain samundar main barry shauq say darya

Lekin kisi darya main samundar nahi girta

Samjho wahan phal dar shajar koi nahi hai

Wo sehan keh jis main koi pathar nahi girta

Itna tu huwa faida barish ki kami ka

Iss shehar main abb koi phisal kar nahi girta

Inam kay lalach main likhay maddah kisi ki

Itna tu kabhi koi sukhan war nahi girta

Heran hay kai roz say thehra huwa pani

Talab main abb kiyun koi kankar nahi girta

Iss banda e kuddar pay nabiyoun ka hai saya

Jo bhook main bhi luqma e tar per nahi girta

Karna hai jo sar marrka e zeest tu sun lay

Bay bazu e haider dar e khaber nahi girta

Qaim hai qateel abb yeh meray sar kay satoon per

Bhonchal bhi aaye tum era ghar nahi girta

read more

thanx for free image download

https://www.pexels.com/

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge
%d bloggers like this: