Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

funny poetry in urdu best 10 sher

read funny poetry in urdu, mazahiya poetry in urdu

اگر تٌم تاج بھی رکھ دو گے سر پر حٌکمرانی کا

نہیں ہو گا مگر راضی کبھی بھی دل زنانی کا

agar tum taaj bhi rakh do gay sar par hukmrani ka

nahi ho ga magar razi kabhi bhi dil zanani ka

نہ چھیڑو ہمیں ہم ستاۓ ہوۓ ہیں

آج ہم ٹھنڈے پانی سے نہاۓ ہوۓ ہیں

na cherro hamain hum sataye huwy hain

aaj ham thandy pani say nahaye huvy hain

بٌرا وقت آسانی سے کٹ جاۓ اگر

موبائیل چارج ہو اور کینڈی کرش ہو

burra waqt aasani say kat jaye agar

mobile charge ho aur candi crush ho

کِتنا بدنصیب سے بچہ کہ نقل کےلیے

دو کاغذ بھی نہ ملے اسے پورے حال میں

kitna badnaseeb hay bacha ke naqal kay liye

do kaghaz bhi na mily usay puray haal main

ہمارا نقصان نہ پوچھیے صاحب

شادی ہو رہی تھی کہ آنکھ کھٌل گئی

hamara nuqsan na puchye sahib

shadi ho rahi thi kay ankh khul gai

funny poetry in urdu

کیا خاک ترقّی کی ہے زمانے نے

مریضِ عشق تو آج بھی لاعلاج ہیں

kiya khak taraqi ki hai zamany nay

mariz e ishq tu aaj bhi lailaj hain

اس کی راہیں تکتے تکتے

مجھ کو عینک لگ گٸ ہے

us ki rahain takty taqty

mujh ko enak lag gai hai

دھوکا مِلا جب پیارمیں زندگی میں اٌداسی چھا گئی

جب اس راہ کو چھوڑنے کا سوچا، کمبخت محلے میں دوسری آگئی

dhoka milla jab piyar main zindagi main udasi cha gai

jab iss rah ko chorrny ka socha, kambakht mohaly main dusri aa gai

جو لوگ پانی میں ایلفی ڈال کر نہاتے ہیں فراز

وہ لوگ کبھی ٹوٹ کر بِکھرا نہیں کرتے

jo log pani main elfi dal kay nahaty hain fraz

vo log kabhi toot kar bikhra nahi karty

تیرے جانے کے بعد وقت تھم سا گیا تھا

پتہ بعد میں چلا گھڑی میں سیل ختم ہو گیا تھا

tery jany kay baad waqt tham sa giya tha

pata baad main challa gharri main cell khatam ho giya tha

mazahiya poetry in urdu

مانا کہ تم ریپلائی نہ کرو گے لیکن

ہم بھی ٹرائی کریں گے بلاک ہونے تک

mana keh tum reply na karo gaiy lekin

hum bhi trai karain gaiy block hony tak

ترس جاؤ گے میرے دیدار کو

بس ایک بار مٌجھے اٌدھار دے کر تو دیکھو

taras jao gaiy mery deedar ko

bas aik baar mujhy udhar day kar tu dekho

شادی کے بارے میں نہ کبھی سوچنا چھڑو

سنتے ہیں اس خیال پہ بھی ٹیکس لگ گیا

shadi kay baray main na kabhi sochna charro

suntay hain iss khayal pay bhi tax lag giya

تیرے در پہ صنم بار بار آئیں گے

گھنٹی بجائیں گے اور پھر بھاگ جائیں گے

tery dar pay sanam bar bar aain gaiy

ghanti bajain gaiy aur phir bhag jain gaiy

ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں

میری کشتی وہاں ڈوبی جہاں پانی کم تھا۔ میرا شعر میری مرضی

sitaron say aagay jahan aur bhi hain

meri kashti vahan dobi jahan pani kam tha – mera sher meri marzi

بچپن میں مار کر سٌلاتے تھے اور ابھی مار کر اٌٹھاتے ہیں

پتہ نہیں میرے ماں باپ مٌجھ سے کیا چاہتے ہیں

bachpan main maar kar sulatay thay aur abhi marr kar uthatay hain

pata nahi mery maan baap mujh say kiya chahtay hain

جس شہر میں کنواروں کو میّسر نہ ہو دٌلہن

اس شہر کے ہر شادی ہال کو گِرا دو

read more

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

CommentLuv badge