Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

mustafa zaidi poetry urdu best 10 sher

read mustafa zaidi poetry

انہی پتھروں پہ چل کر اگر آ سکو تو آٶ

میرے گھر کے راستے میں کوٸ کہکشاں نہیں ہے

hi pathron pe chal ke agar aa sako to aao

mery gher kay rasty main koi kehkishan nahi hai

کِسی زٌلف کو صدا دو کِسی آنکھ کو پٌکارو

بڑی دھوپ پڑ رہی ہے کوٸ سإیباں نہیں ہے

kisi zulf ko sada do kisi aankh ko pukaro

barri dhoop parr rahi hai koi saiban nahi hai

کچے گھڑے نے جیت لی ندی چڑھی ہوٸ

مضبوط کشتیوں کو کِنارہ نہیں مِلا

kachy gharry nay jeet li nadi charri hui

mazboot kashtiyoun ko kinara nahi mila

چلے تو کٹ ہی جاۓ گا سفر آہستہ آہستہ

ہم ان کے پاس جاتے ہیں مگر آہستہ آہستہ

chaly tu kat hi jaye ga safar aahista ahista

ham un ky pass jaaty hain magar aahista aahista

مت پوچھ کہ ہم ضبط کی کس راہ سے گٌزرے

یہ دیکھ کہ تٌجھ پر کوٸ الزام نہ آیا

matt puch ky hum zabt ki kis rah say guzray

ye dekh k tujh par koi ilzam na aya

mustafa zaidi poetry

ہوا نے چاک کیا بارشوں نے دھو ڈالا

بس ایک حرف مٌحبّت کی داستاں کا تھا

hawa nay chak kiya barishon nay dho dala

bas aik harf muhabbat ki dastan ka tha

میری روح کی حقیقت میرے آنسوٶں سے پوچھو

میرا مجلسی تبسّم میرا ترجماں نہیں ہے

meri rooh ki haqeekat mery anuon say pucho

mera majlasi tabbasum mera tarjman nahi hai

دِل کے رشتے عجیب رشتے ہیں

سانس لینے سے ٹوٹ جاتے ہیں

dil kay rishtay ajeeb rishty hain

sans leny say toot jatay hain

ہم نے تو لٌٹ کےمٌحبّت کی روایت رکھ لی

ان سے تو پوچھیے وہ کس لیے پچھتاتے رہے

ham nay tu lut kay muhabat ki ravayat rakh li

un say tu puchayae vo kis liye pachtatay rahy

ہم انجمن میں سب کی طرف دیکھتے رہے

اپنی طرح سے کوٸ اکیلا نہیں مِلا

ham anjuman main sab ki taraf dekhty rahy

apni tarah say koi akela nahi milla

read more

آندھی چلی تو نقش کف پا نہیں مِلا

دِل جس سے مِل گیا وہ دوبارہ نہیں مِلا

read more

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge