Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

munir niazi poetry in urdu best 20 sher

read munir niazi poetry in urdu – hamesha der kar deta hun main

hamesha der kar daita hun main
Zarori Baat Kehni Ho
Koi Waada Nibhana Ho
Usy Awaz Dani Ho
Usy Wapis Bulana Ho
Hamasha dair ker daita hoon main
Madad Kerni Ho Uski
Yar Ki Dharis Bandhana Ho
Buhat Darena Raston Par
Kisi Say Milny Jana Ho
hamesha dair kar daita hun main
Badalte Mosamon Ki Sair Main
Dil Ko Lagana Ho
Kisi Ko Yad Rakhna Ho
Kisi Ko Bhool Jana Ho
Hamasha dair ker daita hoon main
Kisi Ko Maut Se Pehle
Kisi Gham Se Bachna Ho
Haqeqat Aur Thi Kuch
Us Ko Ja Kay Yeh Batana Ho
Hamasha dair ker daita hoon main

hamesha der kar deta hun main lyrics in urdu

hamesha der kar deta hun main lyrics - munir niazi poetry in urdu - besturdu poetry in urdu
hamesha der kar deta hun main lyrics – munir niazi poetry in urdu – besturdu poetry in urdu

ہمیشہ دیر کر دیتا ہوں میں  
ضروری بات کہنی ہو کوئی وعدہ نبھانا ہو
اسے آواز دینی ہو، اسے واپس بلانا ہو
ہمیشہ  دیر  کر  دیتا  ہوں  میں
مدد کرنی ہو اس کی، یار کی ڈھارس بندھانا ہو
بہت دیرینہ رستوں پر کسی سے ملنے جانا ہو

ہمیشہ  دیر  کر  دیتا  ہوں  میں
بدلتے موسموں کی سیر میں دل کو لگانا ہو
کسی کو یاد رکھنا ہو، کسی کو بھول جانا ہو
ہمیشہ  دیر  کر  دیتا  ہوں  میں
کسی کو موت سے پہلے کسی غم سے بچانا ہو
حقیقت اور تھی کچھ اس کو جا کے يہ بتانا ہو
ہمیشہ  دیر  کر  دیتا  ہوں  میں

منیر نیازی

munir niazi poetry in urdu


آ گئی یاد شام ڈھلتے ہی

بجھ گیا دل چراغ جلتے ہی

aa gai yaad shaam dhalty hi

bujh giya dil chaaragh jalty hi

aadat hi bana li hay
aadat hi bana li hay

عادت ہی بنا لی ہے تُم نے تو منیر اپنی

جس شہر میں بھی رہنا ، اکتائے ہوئے رہنا

aadat hi bana li hay tum nay tu munir apni

jis shehar main bhi rehna, uktaye huywy rehna

جانتا ہوں اِک ایسے شخص کو میں بھی مُنیرؔ

غم سے پتھر ہو گیا ، لیکن کبھی رویا نہیں

janta hun ik aisy shakhs ko main bhi munir

gham say pathar ho giya , lekin kabhi roya nahi

یہ کیسا نشہ ہے میں کِس عجب خٌمار میں ہوں

تو آ کے جا بھی چٌکا ہے، میں اِنتظار میں ہوں

ye kesa nasha hai main kis ajab khumar main hoon

tu aa kay ja bhi chuka hai main intizar main hoon

نیند کا ہلکا گٌلابی سا خمار آنکھوں میں تھا

یوں لگا جیسے وہ شب کو دیر تک سویا نہیں

neend ka halka gulabi sa khumar aankhon main tha

youn laga jesy wo shab ko dair tak soya nahi

فإدہ کیا ہے اگر اب وہ مِلے بھی تو مٌنیرؔ

عٌمر تو بیت گٸ راہ پہ لاتے اٌس کو

faida kiya hai agar abb vo milly bhi tu munir

umer tu beet gai rah pay latay us ko

آواز دے کے دیکھ لو شاید وہ مِل ہی جاۓ

ورنہ یہ عٌمر بھر کا سفر رإیگاں تو ہے

awaz day kay dekh lo shayad wo mil hi jaye

warna ye umer bhar ka safar raaigain tu hai

مٌدت کے بعد آج اٌسے دیکھ کر مٌنیرؔ

اِک بار دِل تو دھڑکا مگر پھر سنبھل گۓ

muddat kay baad aaj usay dekh kar munir

ik bar dil tu dharrka magar phir sanbhal gaye

تھا منیرؔ آغاز ہی سے راستہ اپنا غلط

اس کا اندازہ سفر کی رإیگانی سے ہٌوا

tha munir aghaz hi say rasta apna ghalat

iss ka andaza safar ki raigani say huwa

read more

thanks for free image download

https://www.pexels.com/

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

CommentLuv badge