hazaron khwahishen aisi ke har khwahish pe dam nikle

read hazaron khwahishen aisi ke har khwahish pe —

ہَزاروں خَواہشیں ایسی کہ ہر خَواہش پہ دَم نکِلے

بُہت نکِلے میرے اَرمان لیکن پھر بھی کم نکِلے

hazaron khwahishen aisi ke har khwahish pe dam nikle

buhat niklay mery arman lekin phir bhi kam niklay

ڈرے کیوں میرا قاتل کیا رہے گا اس کی گردن پر

وہ خوں جو چشمِ تَر سے عُمر بھَر یوں دَم بَدم نکِلے

نِکلنا خلد سے آدم کا سنُتے آئے ہیں لیکن

بُہت بے آبرو ہو کر تیرے کُوچے سے ہم نکِلے

بھَرم کُھل جائے ظالم تیرے قامت کی دَرازی کا

اگر اِس طرۂ پر پیچ و خم کا پیچ و خَم نکِلے

مگر لِکھوائے کوئی اس کو خط تو ہم سے لکھوائے

ہوئی صبح اور گھر سے کان پر رکھ کر قلّم نکِلے

ہوئی اس دور میں منسوب مجھ سے بادہِ آشامی

پھر آیا وہ زمانہ جو جہاں میں جَام جم نکِلے

ہوئی جِن سے توقع خستگی کی داد پانے کی

وہ ہم سے بھی زیادہ خستۂ تیغ سِتم نکِلے

Muhabbat main nahi hai farq jeenay aur marnay ka
Muhabbat main nahi hai farq jeenay aur marnay ka

مُحّبت میں نہیں ہے فرق جینے اور مَرنے کا

اِسی کو دیکھ کر جیتے ہیں جِس کافر پہ دَم نکِلے

کہاں مے خانہ کا دَروازہ غالبؔ اور کہاں وَاعظ

پراِتناجانتے ہیں کل وہ جاتا تھا کہ ہم نکِلے

lyrics hazaron khwahishen aisi ke har khwahish pe dam nikle

hazaron khwahishen aisi ke har khwahish pe dam nikle

buhat niklay mery arman lekin phir bhi kam niklay

Daray kiyun mera qatil kiya rahay ga us ki garden per

Wo khon jo chashm e tarr say umer bhar youn dam ba dam niklay

Nikalna khald say aadam ka suntay aaye hain lekin

Buhat bay abro ho kar teray kochay say ham niklay

Bharam khul jaye zalim tery qamat ki darazi ka

Agar iss tarra pur pech o kham ka pech o kham niklay

Magar likhwaye koi iss ko khat tu ham say likhwaye

Hui subah aur ghar say kan per rakh kar qalam niklay

Hui iss daur main mansoob mujh say bada aashami

Phir aya wo zamana jo jahan main jam jaam niklay

Hui jin say tuwaqy khastagi ki daad panay ki

Wo haam say bhi ziyada khasta tegh sitam niklay

Muhabbat main nahi hai farq jeenay aur marnay ka

Issi ko dekh kar jeetay hain jis kafir pay daam niklay

Kahan mae-khana ka darwaza ghalib aur kahan waaiz

Per itna jantay hain kal wo jata tha keh ham niklay

read more

thanx for free image download

https://unsplash.com/

Leave a Reply

Your email address will not be published.

CommentLuv badge
%d bloggers like this: